ایک بیوی والا شخص جوانی ہی میں بوڑھا ہوجاتا ہے، ماہرین کی اس بات میں کتنی حقیقت ہے؟ جانیں

ایک بیوی

سائیں کہتے ہیں کہ آدمی کبھی بوڑھا نہیں ہوتا، لوگ یہ بھی مانتے ہیں کہ بوڑھا ہونا اور بوڑھا ہونا دو الگ چیزیں ہیں۔ ایک شخص کی عمر، خاص طور پر آدمی کی عمر اتنی ہی ہوتی ہے جتنی وہ محسوس کرتا ہے اسی لیے لوگ مانتے ہیں کہ آدمی بوڑھا نہیں ہوتا۔زیادہ دیر بیٹھنے سے جلد بڑھاپے کا سبب بن سکتا ہے – جس کی بیوی ہو جوانی میں بوڑھی ہو جاتی ہے

ایک متنازع جملہ ہے جو حالیہ دنوں میں تیزی سے وائرل ہو رہا ہے اور لوگ اس جملے کو استعمال کر رہے ہیں۔ وہ اسے بو علی سینا سے منسوب کر کے شیئر کر رہے ہیں- اب یہ جملہ دراصل بو علی سینا کا ہے یا نہیں، اس کی تصدیق ممکن نہیں تھی، لیکن عام حالات کو دیکھ کر یہ جملہ غلط نہیں لگتا۔اس جملے کی تائید میں ہم آپ کو اس حوالے سے صورتحال بتائیں گے 1: مایوسی بڑھ جاتی ہے۔ جمود کی وجہ سے پانی گندا ہو جاتا ہے- اسی طرح ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر کوئی مرد صرف ایک بار شادی کرے تو کچھ عرصے بعد اس کی زندگی بھی جمود کا شکار ہو جائے گی اور وہ خوش ہونے کی بجائے مایوس ہو جائے گا۔ شکار زندہ رہنے لگتا ہے۔جو اس کے لیے مختلف بیماریوں کا باعث بنتا ہے- 2: محنت کرنے کی عادت کم ہوجاتی ہے۔ جو کہ بڑھاپے کی ایک اہم علامت ہے، وہ کام کرتے کرتے تھک جاتا ہے اور تھوڑی سی مشقت کے بعد تھک جاتا ہے،

جس کی وجہ سے بڑھاپا اس کے اعصاب پر سوار ہو جاتا ہے- 3: غصہ بڑھتا ہے مونوگیمس لوگوں کو غصہ زیادہ آتا ہے اور ان کی خوشامد کہیں نہ کہیں چلی جاتی ہے۔

Leave a Comment